یومِ استحصالِ کشمیر پر ملک بھر میں بھارت کیخلاف ریلیاں، احتجاج

مقبوضہ کشمیر پر بھارت کے 5 اگست کے اقدام کو آج 2 برس مکمل ہونے پر آج ملک بھر میں یومِ استحصالِ کشمیر منایا جا رہا ہے، اس سلسلے میں آزاد کشمیر سمیت پاکستان بھر میں بھارت کے مظلوم کشمیریوں پر ظلم و جبر کے خلاف احتجاج کیا جا رہا ہے اور ریلیاں نکالی جا رہی ہیں۔ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں دفترِ خارجہ سے وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی کی قیادت میں نکالی گئی مرکزی ریلی میں صدرِ مملکت ڈاکٹر عارف علوی، وفاقی وزیرِ اطلاعات و نشریات فواد چوہدری، وزیرِ داخلہ شیخ رشید اور دیگر وزراء نے شرکت کی۔ اس موقع پر کشمیریوں سے یکجہتی کے لیے 1 منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی، جبکہ 1 منٹ کے لیے ملک بھر میں ٹریفک بھی روک دیا گیا۔ شرکائے ریلی سے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی، وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیرِ داخلہ شیخ رشید احمد، وزیرِ اطلاعات و نشریات فواد چوہدری اور دیگر نے خطاب بھی کیا۔ اسلام آباد میں آل پارٹیز حریت کانفرنس کے زیرِ اہتمام بھارتی ہائی کمیشن کے باہر احتجاج کیا گیا، مظاہرین نے بھارتی بربریت کے خلاف بینر اٹھا رکھے تھے۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ مسئلہ کشمیر کا حل اقوامِ متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق کیا جائے، بھارت تمام کشمیری سیاسی قائدین کو رہا کرے۔ آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد میں مقبوضہ کشمیر کے شہریوں سے اظہارِ یک جہتی کرتے ہوئے اقوامِ متحدہ کے مبصر مشن کے دفتر کے سامنے مظاہرہ کیا گیا۔ مظاہرین نے یو این مبصر مشن کے دفتر کے سامنے بھارتی وزیرِ اعظم نریندر مودی کے خلاف نعرے لگائے۔لاہور میں جی پی او چوک میں کشمیر لائرز فورم اور پاک کشمیر افیئرز کمیٹی کے زیرِ اہتمام کشمیریوں کے حق میں مظاہرہ کیا گیا۔ لاہور ہائی کورٹ کے باہر وکلاء برادری نے کشمیریوں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کرتے ہوئے مظاہرہ کیا، وکلاء نے ’کشمیر بنے گا پاکستان‘ اور ’گو مودی گو‘ کے نعرے بھی لگائے۔ خیبر پختون خوا کے شہر چارسدہ میں یومِ استحصالِ کشمیر کے حوالے سے ضلعی انتظامیہ کے زیرِ اہتمام ریلی کا انعقاد کیا گیا۔ سندھ کے شہر سکھر میں یومِ استحصال کشمیر پر پاکستان سنی تحریک نے پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور بھارت کے خلاف نعرے لگائے۔ گھوٹکی کے علاقے میر پور ماتھیلو میں کشمیریوں سے اظہارِیک جہتی کے لیے مینگواڑ برادری نے ریلی نکالی، ریلی چوک اللّٰہ والی سے پریس کلب میر پور ماتھیلو تک نکالی گئی۔ ڈہرکی میں یومِ استحصالِ کشمیر پر ہندو برادری نے ریلی نکالی، داد روڈ سے ڈہرکی پریس کلب تک نکالی گئی ریلی میں شرکاء نے کشمیریوں کے حق میں نعرے بلند کیئے۔ ریلی کے شرکاء نے ’کشمیر پاکستان کی شہہ رگ ہے‘، ’کشمیر بنے گا پاکستان‘ کے نعرے بلند کیئے اور مطالبہ کیا کہ عالمی برادری کشمیر میں بھارتی جارحیت کا نوٹس لے۔ شرکائے ریلی نے 2 منٹ کی خاموشی اختیار کر کے کشمیریوں سے اظہارِ یک جہتی بھی کیا۔ عمر کوٹ کے علاقے کنری میں یومِ استحصالِ کشمیر کے حوالے سے ریلی نکالی گئی جس میں طلبہ اور شہریوں نے شرکت کی۔ عمر کوٹ میں ہندو برادری کی جانب سے کشمیر پر بھارتی مظالم کے خلاف تھر بازار سے پریس کلب تک ریلی بھی نکالی گئی۔ بلوچستان کے سرحدی شہر چمن میں یومِ استحصال کشمیر کے سلسلے میں ڈپٹی کمشنر جمعہ داد مندوخیل کی قیادت میں ریلی نکالی گئی جس میں اسکول کے بچوں، سیاسی و سماجی کارکنوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ ریلی ضلع کمپلیکس سے نکالی گئی جو مختلف شاہراہوں پر گشت کرتی رہی جبکہ ماڈل اسکول میں جلسہ کیا گیا۔ ڈی سی چمن جمعہ داد مندوخیل نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے، کشمیر ضرور آزاد ہو گا۔