تعلیمی ادارے چھبیس نومبر سے بند، گیارہ جنوری کو دوبارہ کھلیں گے, امتحانات بھی ملتوی

کورونا وائرس، تعلیمی ادارے جمعرات سے بند، امتحانات ملتوی،24دسمبر تک آن لائن کلاسز،25دسمبر سے10جنوری تک تعطیلات،دسمبر میں ہونے والے امتحانات ملتوی، مارچ اپریل کے بورڈ امتحانات مئی جون میں لینے کی سفارش، انٹری لیول ٹیسٹ جاری رہیں گے،ووکیشنل انسٹی ٹیوٹ جن میں روزانہ کلاسز نہیں ہوتیں چلتے رہیں گے،پنجاب میں اساتذہ پیراور جمعرات کو اسکول آئیں گے۔ وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود کی زیر صدارت بین الصوبائی وزرائے تعلیم کے اجلاس میں تمام تعلیمی ادارے جن میں اسکول ، یونیورسٹیاں، ٹیوشن سینٹر 26نومبر سے 24 دسمبر تک بند کرنیکا فیصلہ کیا گیا جبکہ25دسمبرسے10جنوری تک موسم سرما کی تعطیلات ہوں گی، تعلیمی ادارے 11جنوری سے دوبارہ اپنی تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز کریں گے جبکہ اس سے قبل جنوری کے پہلے ہفتہ میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے ایک جائزہ اجلاس ہو گا جس میں اس وقت کی صورتحال پر غور کیا جائے گا، دسمبر میں جو بھی امتحانات ہونا تھے انہیں ملتوی کردیا گیا ہے تاہم انٹری ٹیسٹ اور ملازمتوں کے لئے ہونے والے امتحانات کی اجازت ہو گی،یونیورسٹیوں میں فوری طورپر آن لائن تعلیمی سرگرمیوں کا آغاز کردیا جائے گا۔ یونیورسٹی ہاسٹل میں ایک تہائی طلباءکو رہنے کی اجازت ہو گی جس میں وہ طلباءجو دور دراز علاقوں سے ہیں جہاں انٹرنیٹ کی سہولیات میسرنہیں اور غیر ملکی طلباءشامل ہوں گے، ہاسٹل میں رہنے کی اجازت کے بارے میں یونیورسٹیز خود فیصلہ کریں گی،پی ایچ ڈی کرنے والے طلبا اور جو طلبا اپنے پروجیکٹ کے لئے لیب میں کام کررہے ہیں ان کو بھی یونیورسٹی آنے کی اجازت ہو گی، وفاقی وزیر تعلیم نے کہا کہ مختلف ہنر وں کی تعلیم دینے والے ادارے جہاں طلبا کو فیکٹریوں اور ورکشاپ میں تعلیم دی جارہی ہے بھی اپنی تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھیں گے، اسکولوں میں اساتذہ کو آنے کی اجازت ہو گی اور اس بارے میں اسکول خود فیصلہ کریں گے کہ انہیں کتنے اساتذہ کی ضرورت ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ تعلیمی بورڈز کے امتحانات مارچ اپریل کی بجائے مئی جون میں کرانے کی تجویز ہے جبکہ تعلیمی نقصان کو پورا کرنے کے لئے گرمیوں کی چھٹیاں منسوخ کرنے اور نیا تعلیمی سال اگست تک لے جانے کی بھی تجویز ہے۔ دوسری جانب پنجاب کے وزیر تعلیم مراد راس کا کہنا ہےکہ کورونا میں صرف اسکول بند کرنے سے کچھ نہیں ہوگا بلکہ بچوں کے پارکوں اور شاپنگ مالز میں داخلے پر بھی پابندی ہونی چاہیے،لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مراد راس نے کہاکہ اس ہفتے سے 10جنوری تک تمام تر چھوٹے بڑے کالجزبند رہیں گے، ہم اسکول بند نہیں کرنا چاہتےتھے لیکن کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث یہ فیصلہ کرنا پڑا، بچوں کو ہوم ورک کے بغیر نہیں جانے دیا جائے گا اور ہوم ورک کی بنیاد پر اگلی کلاس میں پروموشن پر ہوگا، ٹیچرز کو ہفتے میں دو دن پیر اور جمعرات کو اسکول آنا ہوگا جب کہ 50 فیصد ٹیچر پیر اور باقی 50 فیصد جمعرات کو اسکول آئیں گے۔۔